سی پیک : برطانوی سرمایہ کارسی پیک سے فائدہ اٹھائیں:شہباز شریف | (سی پیک )چائنا پاکستان اکنامک کوری ڈور

برطانوی سرمایہ کارسی پیک سے فائدہ اٹھائیں:شہباز شریف


بشکریہ : Nawai Waqt   تاریخ : 07-12-2017   

برطانوی سرمایہ کارسی پیک سے فائدہ اٹھائیں:شہباز شریف

برطانوی سرمایہ کارسی پیک سے فائدہ اٹھائیں:شہباز شریف


لاہور(خصوصی رپورٹر+ایجنسیاں) وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف سے لندن کے میئر صادق خان کی سربراہی میںبرطانوی سرمایہ کاروں کے وفدنے ملاقات کی جس میں برطانوی سرمایہ کاروں نے سی پیک کے منصوبوں میں سرمایہ کاری میںدلچسپی کا اظہار کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پاکستان اوربرطانیہ کے درمیان تاریخی اوردوستانہ تعلقات کئی دہائیوں پر محیط ہیںاور پاکستان برطانیہ سے تعلقات کو بہت اہمیت دیتا ہے ۔ پنجاب اور برطانیہ کے درمیان مختلف شعبوں میں تعاون کو مزید فروغ دینا وقت کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک پرامن ملک ہے، دہشت گردی کے ناسور سے نمٹنے کیلئے پاکستان نے لازوال قربانیاں دی ہیںاوردہشت گردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کو بے مثال کامیابیاں ملی ہیں۔ دہشت گردی کیخلاف جنگ ہرقیمت پر جیتنا ہے ۔وہ وقت دور نہیں جب پاکستانی قوم اس جنگ میں سروخرو ہوگی۔بندوق کی گولی کیساتھ معاشی و سماجی اقدامات کے ذریعے یہ جنگ جیتیں گے۔دہشت گردی کے ناسور کا مکمل خاتمہ پوری قوم کا عزم ہے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ سی پیک نے پاکستان میں غیر ملکی سرمایہ کاری کے نئے دروازے کھولے ہیں ۔

برطانوی سرمایہ کار سی پیک کے منصوبوں میں سرمایہ کاری کرکے فائدہ اٹھائیں۔سی پیک کے منصوبوں میں برطانوی سرمایہ کاروں کو خوش آمدید کہیں گے۔یہ عظیم موقع برطانوی سرمایہ کاروں کو آگے آنے کی دعوت دیتا ہے۔ لندن کے ساتھ پبلک ٹرانسپورٹ، سینی ٹیشن اورٹریفک کے شعبوں میں تعاون کو مزید فروغ دینا چاہتے ہیں ۔مئیر لندن صادق خان نے کہا کہ لندن اورلاہور کے مابین تعلقات بہت اچھے ہیں اورہم لاہور کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعاون اورسرمایہ کاری کوبڑھانا چاہتے ہیں ۔ شہبازشریف نے بہت اپنایت دی ہے،جس پر ہم ان کے شکرگزار ہیں ۔انہوںنے کہاکہ سرمایہ کاری بڑھانے کیلئے ملکر کام کریںگے۔برطانوی سرمایہ کاروں نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ شہبازشریف نے پنجاب کی ترقی کیلئے بے مثال اقدامات کئے ہیں اورشہبازشریف کی قیادت میں پنجاب میں سرمایہ کاری کیلئے بہترین ماحول موجود ہے ۔

وزیراعلیٰ نے لندن کے میئر صادق خان اوران کے وفد کے اعزاز میں ظہرانہ دیا۔ شہباز شریف سے میئر لندن صادق خان کی ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور، دو طرفہ تعلقات کے فروغ اور مختلف شعبوں میں تعاون بڑھانے پر بات چیت کی گئی۔ شہبازشریف نے کہا کہ آپ کو تاریخی شہر لاہور آمد پر خوش آمدید کہتے ہیں۔ شہبازشریف سے ملاقات کرنیوالے برطانوی سرمایہ کاروں کے وفد نے پنجاب میں سرمایہ کاری کیلئے ساز گار ماحول پر اطمینان کا اظہار کیااورمختلف شعبوں میں سرمایہ کاری میں دلچسپی کا اظہار کیا۔برطانوی سرمایہ کاروں کا کہنا تھا کہ وزیراعلی شہبازشریف کی قیادت میں پنجاب حکومت کے اقدامات سے سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال ہواہے اورہم پنجاب میں سرمایہ کاری کرنا چاہتے ہیں۔ شہبازشریف نے ڈاکٹر جاوید رشید کے انتقال پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔قبل ازیں میئر صادق خان وفد کے ساتھ واہگہ بارڈر کے راستے لاہور پہنچے۔ معزز مہمانوں کا لاہور آمد شاندار استقبال کیا گیا۔ لارڈ میئر لاہور کرنل(ر) مبشر جاوید نے میئر لندن کو خوش آمدید کہا۔ میئر لندن نے مزار اقبال پر حاضری دی اور پھولوں کی چادر چڑھائی۔ انہوں نے بادشاہی مسجد کا بھی دورہ کیا۔

تقریب سے خطاب میں صادق خان نے کہا ہے کہ پاکستان اور لندن کامستقبل روشن ہے‘ پاکستان سمیت دنیا بھر سے سرمایہ کار لندن آسکتے ہیں‘ بیرونی سرمایہ کاروں کیلئے لندن کے دروازے کھول دیئے ہیں‘ پاکستانیوں کی محبت سے بہت زیادہ متاثر ہوا‘ میرے آبائو اجداد پاکستان سے ہیں جن پر فخر ہے‘ پاکستان کی ترقی کیلئے تعاون جاری رکھیں گے۔ میئر لندن نے کہا کہ ہمارا پروگرام ’’لندن از اوپن‘‘ سب کہتے ہیں‘ پاکستان میں قابل رشک ترقی ہوئی‘ لندن کی طرح پاکستان کی ٹرانسپورٹ میں بھی بہتری آئی۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان میں آکر ملنے والی محبت سے بہت متاثر ہوا‘ لاہوریوں کی میزبانی بہت شاندار ہے‘لندن میں پاکستان کمیونٹی کا کردار قابل فخر ہے‘ وہاں موجود بہت سے سیاستدان‘ اساتذہ اور بزنس مینوں کا تعلق پاکستان سے ہے‘ لندن ایک عظیم شہر ہے جسے یہ مقام دلانے میںپاکستانیوں کا بڑا حصہ تھا‘ میئر لندن بننے کے بعد پاکستان کا پہلا دورہ ہے‘ یہاں پرتپاک استقبال کرنے پر لاہور یوں کا شکر گزار ہوں‘ میئر لندن نے کہا کہ لندن کے دروازے کاروبار‘ دوستی کیلئے پاکستان کیلئے کھلے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان لندن سمیت دنیا بھر کی معیشت میں بہترجگہ بنا سکتا ہے۔ شرکاء کے سوالوں کے جواب دیتے ہوئے میئر لندن نے کہاکہ اگر کوئی مسلمان برطانوی وزیر اعظم کیلئے نامزد ہوا تو اسے سپورٹ کروں گا‘لندن میں گزشتہ کچھ عرصہ کے دوران چاردہشت گردی کے واقعات ہوئے‘ ہمیں دہشت گردی پر قابو پانے کیلئے ایک پلیٹ فارم پر متحد ہونا ہو گا۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ہنر مند افراد کو لندن میں ترجیحی بنیادوں پر ویزے جاری کئے جاتے ہیں‘ پاکستانی طلبہ اور ہنر مندوں کو ویزوں کے اجراء میں آسانی پیدا کرنے کیلئے تجاویز دوں گا‘ 70 سال سے جاری پاک بھارت تنازعات کے حل کیلئے کردار ادا کرنے کیلئے بھی تیار ہوں۔

لندن میں موجود بہت سے سائنسدان، اساتذہ اور بزنس مین پاکستانی ہیں، ہم آپ سے بالاتر نہیں ہیں کہتا رہتا ہوں پاکستانیوں سے برابری کی سطح پر گفتگو کی جائے۔ جمہوریت کو چلتے رہنا چاہئے۔ جمہوریت اور جمہوری نظام اہم چیز ہے۔ پاکستان اور برطانیہ کے تجارتی تعلقات جلد مضبوط ہوں گے۔ پاکستان، بھارت تعلقات اچھے ہو سکتے ہیں پاکستان بھارت تعلقات عوامی رابطوں سے بہتر ہو سکتے ہیں۔ لوگوں نے کہا بیک وقت بھارت اور پاکستان نہ جائیں لیکن میں آ گیا۔ ترقی کیلئے پاکستان اور بھارت کے باہمی تعلقات بہت ضروری ہیں۔ داعش کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں۔ نوجوانوں کو صحیح اسلام بتائیں تاکہ وہ برائی کی طرف نہ جائیں۔ علاوہ ازیں شہبازشریف نے کہا کہ بیت المقدس کو دارالحکومت تسلیم کرنے کے فیصلے سے امن عمل متاثر ہوگا۔ ٹرمپ کے فیصلے سے پرانے زخم تازہ ہوگئے۔